مظفرآباد: صدر آزاد جموں و کشمیر بیرسٹر سلطان محمود چوہدری اپنے اعزاز میں دیئے گئے عید ملن کے موقع پر صحافیوں سے خطاب کر رہے ہیں

.

صدارتی سیکرٹریٹ آزاد جموں و کشمیر مظفرآباد
13.05.2022
٭٭٭
مظفرآباد( ) 13مئی 2022
صدر آزاد جموں و کشمیر بیرسٹر سلطان محمود چوہدری نے کہا ہے کہ بھارتی وزیر دفاع راج ناتھ سنگھ نے آزاد کشمیر پر برملہ حملے کا اظہار کیا ہے لہذا اسے سنجیدگی سے لینا چاہیے کیونکہ بھارت پہلے بھی 26 فروری2019 کو بالاکوٹ پر جارحیت کر چکا ہے۔ بھارت نے 5اگست 2019 کو مقبوضہ کشمیر کی آئینی حیثیت تبدیل کرنے کے اقدام کے بعد اس نے مقبوضہ کشمیر میں تیزی سے غیر قانونی اور غیر آئینی اقداما ت اٹھانے شروع کر دیئے ہیں جس کے تحت 42لاکھ غیر ریاستی ہندؤں کو جعلی ڈومیسائل جاری کیے گئے۔ اسی طرح چار ہزار بھارتی سرمایہ کاروں کو سرمایہ کاری کی آڑ میں مقبوضہ کشمیر میں زمین الاٹ کی جا رہی ہے اور اب بھارت نے مقبوضہ کشمیر میں ڈی لیمٹیشن کا عمل بھی شروع کر دیا ہے جس کے تحت مقبوضہ کشمیر میں نئی حلقہ بندیاں تشکیل دی جا رہی ہے جس کے تحت وہ مقبوضہ کشمیر میں ایک ہندؤ وزیراعلیٰ کو لانے کی راہ ہموار کر رہے ہیں۔ لہذا عالمی برادی کو اس کا نوٹس لینا چاہیے اور بھار ت کو مقبوضہ کشمیر میں جاری غیر قانونی اور غیر آئینی مقدامات سے روکنا چاہیے۔ اس سلسلے میں اندرون اور بیرون ملک مقیم کشمیری اپنی بھرپور آواز دنیا کے ایوانوں تک بلند کریں۔ ان خیالات کا انہوں نے آج یہاں مظفرآباد میں امبور کے مقام پر پی ٹی آئی آزاد کشمیر کے مرکزی رہنماء سید وارث علی گیلانی کی جانب سے اپنے اعزاز میں دیئے گئے عید ملن کے موقع پر صحافیوں سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ صدر ریاست بیرسٹر سلطان محمود چوہدری نے مزید کہا کہ میں نے جب گزشتہ برس اگست میں صدر ریاست کے عہدے کا حلف اٹھایا تھا تو میں نے برملہ اس چیز کا عہد کیا تھا کہ میں کسی صوبے یا ریاست کا نہیں بلکہ آزادی کے بیس کیمپ کا صدر ہوں اور ہم آزاد کشمیر کو صحیح معنوں میں آزادی کا بیس کیمپ بنائیں گے اور یہاں سے عالمی سطح پر مقبوضہ کشمیر کی آزادی کے لیے آواز بلند کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ میں نے صدر کا عہدہ سنبھالتے ہی امریکہ، برطانیہ اور یورپ کے دورے کیے اور مسئلہ کشمیر اور مقبوضہ کشمیر کی سنگین صورت حال پر دنیا کی توجہ مبذول کروائی۔ بعد ازاں میں نے اسلام آباد میں او آئی سی وزرائے خارجہ کانفرنس میں شرکت کی اور او آئی سی کشمیر کونٹیکٹ گروپ سے بھی خطاب کیا۔ جس میں او آئی سی نے مقبوضہ کشمیر میں جاری مظالم کی بھرپور مذمت کی اور مسئلہ کشمیر اور کشمیریوں کی حمایت کا اعلان کیا۔ جبکہ اسی طرح میں گزشتہ ماہ رمضان المبارک میں او آئی سی کی خصوصی دعوت پر سعودی عرب میں او آئی سی ہیڈ کوارٹر جدہ کا ددورہ کیا جس میں میں او آئی سی کے سیکرٹری جنرل اور اعلیٰ عہدیداران سے ملاقاتیں کر کے مسئلہ کشمیر اور مقبوضہ کشمیر کی صورتحال پر بریفنگ دی۔ جبکہ اسی طرح میں جدہ میں اسلامک ڈویلپمنٹ بینک کے صدر و سعودی عرب کے سابق وزیر خزانہ سے ملاقاتیں کر کے آزاد کشمیر میں تعمیرو ترقی خصوصاً تعلیم کے فروغ کے لیے اقدامات اٹھانے پر زور دیا۔ صدر ریاست بیرسٹر سلطان محمود چوہدری نے مزید کہا کہ بھارت وزیر خارجہ راج ناتھ سنگھ کا آزاد کشمیر پرحملے کا بیان سنجیدگی سے لیا جانا چاہیے کیوں کہ بھارت عالمی سطح پر تنہا ہو چکا ہے اور وہ بوکھلاہٹ میں ایسے بیانات دے رہے ہیں۔ لہذا انٹر نیشنل کمیونٹی بھارت کو اس کے مکروح عزائم سے باز رکھے۔
٭٭٭٭

Download as PDF