President AJ&K Barrister Sultan Mehmood Chaudhry addressing a public gathering in Khari Sharif۔

۔
چیچیاں کھڑی شریف ( ) 18نومبر2021ء
صدر آزاد جموں وکشمیر بیرسٹر سلطان محمود چوہدری نے کہا ہے کہ میں صرف مودی کو اپنا حریف سمجھتا ہوں میں نے اعلان کیا تھا کہ مودی جہاں بھی جائے گا میں اس کا پیچھا کروں میں اس سے قبل مودی کے خلاف صرف بین الاقوامی سطح پر مظاہرے کرتا تھا اب میں صدر ریاست ہوں اس لیے مودی بین الاقوامی سطح پر جس فورم پر جائے گا میں اس کا وہاں جا کر پیچھا کروں گاآزاد کشمیر میں پارلیمانی نظام ہے پارلیمانی نظام میں عوام طاقت کا سرچشمہ ہوتے ہیں اور کارکن پارٹی کا اثاثہ ہوتے ہیں جبکہ ممبران اسمبلی پارلیمانی نظام کی روح ہوتے ہیں ہم نے طاقت کے سرچشمہ عوام کے حقوق کا تحفظ کرنا ہے آزاد کشمیر میں تحریک انصاف کی حکومت پی ٹی آئی کشمیر کے کارکنوں کی مرہون منت ہے ہم کارکنوں کو عزت دیں گے ان کے لیے ہر ممکن اقدامات اٹھاؤں گا۔ممبران اسمبلی پارلیمانی نظام کی روح ہوتے ہیں میں ان کے لیے بھی آواز اٹھاؤں گا میں جب وزیراعظم تھا تو میں پاکستان میں چار مخالف حکومتوں کا سامنا کیا میں ایسا اس لیے کیا کیونکہ ممبران اسمبلی میرے ساتھ تھے۔میں نے صدر ریاست کے عہدے کا حلف اٹھاتے وقت تین باتیں کہیں تھیں پہلی یہ کہ میں آزادی کے بیس کیمپ کا صدر ہوں اور میری پہلی اور آخری ترجیحی کشمیر کاز کے لیے جدوجہد کرنا ہے دوسرا میں نے کہا تھا کہ آزاد کشمیر سے ہم کرپشن کا خاتمہ کریں گے جس کے لیے احتساب ایکٹ میں ترمیم کر کے اسے اس قابل بنائیں گے کہ آزاد کشمیر میں بلا امتیاز سب کا احتساب ہو سکے تیسری بات میں نے اقتدار کو نچلی سطح پر منتقل کرنے کی کی تھی جس کے لیے آزاد کشمیر میں جلد بلدیاتی انتخابات کروائے جا رہے ہیں۔میں نے ستمبر کے آخری ہفتہ میں امریکہ کا دورہ کیا جبکہ اکتوبر کے آخری ہفتہ میں برطانیہ و یورپ کا دورہ کیا ان دو دوروں کی وجہ سے کشمیر ایشو کو بین الاقوامی سطح پر زبردست پزیرائی ملی 26 ستمبر کو مودی کے جنرل اسمبلی سے خطاب کے موقع پر میں نیویارک میں اوورسیز کمیونٹی کے مظاہرے کی قیادت کر کے مودی کا مکروہ چہرہ دنیا کے سامنے بے نقاب کیا۔27 اکتوبر یوم سیاہ کے موقع پر میں نے لندن28 اکتوبر کو برسلز29 اکتوبر کو دی ہیگ عالمی عدالت انصاف جبکہ30 اکتوبر کو پیرس میں بھارت کے خلاف مسلسل چار دنوں میں چار مظاہرے کیے جبکہ 26 اکتوبر کو میں نے برطانوی پارلیمنٹ کے اجلاس سے خطاب کیا جس میں 50 سے زائد ممبران پارلیمنٹ نے شرکت کی یہ ایک ریکارڈ ہے اس سے قبل کسی کشمیری یا پاکستانی لیڈر کے برطانوی پارلیمنٹ کے اجلاس سے خطاب کے موقع پر اتنے ممبران پارلیمنٹ نے شرکت نہیں کی۔اہلیان کھڑی شریف نے آج جس جوش و خروش سے میرا استقبال کیا ہے اس پر میں کھڑی شریف کی عوام کا شکریہ ادا کرتا ہوں ان خیالات کا اظہارانہوں نے نے آج یہاں چیچیاں کھڑی شریف میں اپنے اعزاز میں منعقدہ ایک بہت بڑے استقبالیہ جلسہ عام سے بطور مہمان خصوصی خطاب کے دوران کیا۔ صدر ریاست آزادجموں وکشمیر بیرسٹر سلطان محمود چوہدری نے مزید کہا کہ میں پانچ سال وزیراعظم رہا پانچ سال اپوزیشن لیڈر رہا اب صدر ریاست ہوں نو بار ممبر اسمبلی رہا میرے سارے سیاسی سفر میں کھڑی شریف کی عوام سینہ تان کر چٹان کی طرح میرے ساتھ کھڑی رہی ہم کھڑی شریف کے تمام مسائل حل کریں گے، کھڑی شریف میں سوئی گیس کی فراہمی، نوجوانوں کے لئے روز گار کی فراہمی سمیت تمام حل طلب مسائل حل کریں گے۔ بیرسٹر سلطان محمود چوہدری کی صدر ریاست آزاد جموں وکشمیر کا عہدہ سنبھالنے کے بعد اپنے آبائی علاقے چیچیاں کھڑی شریف میں پہلی باقاعدہ استقبالیہ تقریب جلسہ عام کی شکل اختیار کر گئی حلقہ کھڑی شریف کے اطراف و اکناف سے عوامی سمندر جلسہ گاہ امنڈ آیا۔جلسہ عام میں آمد پر صدر ریاست آزاد جموں وکشمیر بیرسٹر سلطان محمود چوہدری کا دیدنی استقبال،سلطان تیرے جان نثار کے نعرے چیچیاں کی فضاؤں میں گونج اٹھے۔استقبالیہ انتظامات کے حوالے سے چوہدری صہیب ارشد، چوہدری شیراز اکرم، وقاص جنید متحرک رہے۔ جلسہ عام کی صدرات وزیر توانائی و آبی وسائل چوہدری ارشد حسین نے کی۔ جلسہ عام سے صدر ریاست بیرسٹر سلطان محمود چوہدری کے علاوہ چوہدری ارشد حسین،چوہدری مقبول گجر، چوہدری یاسر سلطان، صبیحہ صدیق،پولیٹیکل سیکرٹری سکندر بیگ، ضلعی صدر پی ٹی آئی کشمیر چوہدری صدیق ایڈووکیٹ، چوہدری شیراز اکرم اور دیگر نے بھی خطاب کیا۔
٭٭٭٭٭

Download as PDF